DOWNLOAD OUR APP
IndiaOnline playstore
01:46 AM | Tue, 28 Jun 2016

Download Our Mobile App

Download Font

گائے کے گوشت پر متنازع بیانات دینے پر سیاست دانوں کی’سرزنش‘

252 Days ago

141220153326_india_bjp_amit_shah

بھارت میں حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی کے سربراہ امت شاہ نے گائے کے گوشت کے بارے میں متنازع بیانات دینے پر جماعت کے چار سیاست دانوں کی سرزنش کی ہے۔ان میں ایک رہنما نے بیان دیا تھا کہ اگر گائے کا گوشت کھانے پر پابندی نہ بھی ہو تو اسے کھانے والے کو پھانسی دے دینی چاہیے۔ ایک دوسرے سیاست دان جنھیں امت شاہ نے متنبہ کیا ہے انھوں نے گائے کا گوشت کھانے کے الزام میں ایک مسلمان کی تشدد سے ہلاکت کو محض ایک حادثہ قرار دے کرنظرانداز کر دیا تھا۔بھارت میں حالیہ دنوں ہندؤں کی جانب سے مسلمانوں پر گائے کا گوشت کھانے کے الزام یا اس کی سمگلنگ کے الزامات پر حملوں میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔سنیچر کو ہی ریاست ہماچل پردیش میں بعض مقامی لوگوں نے ٹرک میں گائے لے جانے والے بعض افراد پر حملہ کر دیا جس میں ایک شخص ہلاک ہوگيا اور چار دیگر شدید زخمی ہو گئے۔جبکہ ایک دن پہلے جمعے کو شمالی ریاست ہریانہ کے وزیراعلیٰٰ کا کہنا تھا کہ اگر مسلمانوں کو ملک میں رہنا ہے تو انھیں گائے کا گوشت کھانا چھوڑنا ہوگا۔رواں ماہ ہی بھارت کے زیرانتظام جموں و کشمیر میں حکمراں بھارتیہ جنتا پارٹی کے ارکان اسمبلی نے گائے کے گوشت کی پارٹی کا انعقاد کرنے پر اسمبلی میں ایک آزاد رکن پر تشدد کیا۔گذشتہ ماہ دہلی سی متصل دادری میں گائے کا گوشت کھانے کی افواہ پر گاؤں والوں نے ایک مسلمان خاندان پر حملہ کر دیا تھا۔ اس واقعے میں 50 برس کے محمد اخلاق کی موت ہوگئی تھی جبکہ ان کے نوجوان بیٹے کا اب بھی ہسپتال میں علاج چل رہا ہے۔ بھارت میں حالیہ دنوں اس طرح کے واقعات پر کئی حلقوں کی جانب سے ایس پر تشویش ظاہر کی جا رہی ہے۔ان واقعات کے بعد 20 کے قریب خلاف احتجاج کے طور پر اپنے باوقار ادبی ایوارڈ واپس کر دیے ہیں۔

()

Viewed 275 times
  • SHARE THIS
  • TWEET THIS
  • SHARE THIS
  • E-mail

Our Media Partners

app banner

Download India's No.1 FREE All-in-1 App

Daily News, Weather Updates, Local City Search, All India Travel Guide, Games, Jokes & lots more - All-in-1